بی جے پی کی پالیسیوں کے باعث بھارت کے وجود کو خطرہ ہے،یشونت سنہا

نئی دہلی 27 جون (کے ایم ایس) بھارت میں اپوزیشن جماعتوں کے مشترکہ صدارتی امیدوار یشونت سنہا نے کہا ہے کہ یہ انتخاب بی جے پی کے آمرانہ طرز حکومت کے خلاف مزاحمت کی طرف ایک قدم ہے۔
کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق یشونت سنہا نے ایک انٹرویو میں کہا کہ یہ انتخاب بھارت کے صدر کے انتخاب سے کہیں بڑ ھ کر ہے،یہ الیکشن حکومت کی آمرانہ پالیسیوں کے خلاف مزاحمت کی طرف ایک قدم ہے ، یہ انتخاب بھارت کے لوگوں کے لیے ایک پیغام ہے کہ بی جے پی پالیسیوں کے خلاف مزاحمت ہونی چاہیے۔ سہنا نے مودی حکومت کی طرف سے ایک قبائلی رہنماDroupadi Murmu کو صدارتی انتخابات کے لیے نامزد کرنے پر کہا کہ ایک فرد کو بلند کرنا پوری برادری کی بلندی کو یقینی نہیں بناتا جبکہ کسی برادری کی ترقی کا انحصار حکومت کی طرف سے چلائی جانے والی پالیسیوں پر ہوتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہماری جمہوریت، ہمارے آئین کو خطرہ ہے اور آزادی کی جدوجہد کی تمام اقدار خطرے میں ہیں لہذا بھارت کے وجود کو خطرہ ہے اور لوگوںکو ملک کی حفاظت کے لیے اٹھنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی تفتیشی ایجنسیوں کا سیاسی مقاصد کے لیے اتنا غلط استعمال کبھی نہیں ہوا جتنا آج ہو رہا ہے۔سنہا نے مزید کہا کہ اگر وہ منتخب ہوئے تو سیاسی مخالفین کو نشانہ بنانے کے لیے سرکاری ایجنسیوں کے غلط استعمال کو فوری طور پر ختم کریں گے اور انصاف کی بالادستی کو یقینی بنائیں گے۔
بھارتی صدارتی انتخابات 18 جولائی کو ہوں گے۔سنہا آج پیر کو کاغذات نامزدگی داخل کریں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

%d bloggers like this: