تازہ ترین

مقبوضہ کشمیر:میر واعظ عمر فارو ق کو ایک بار پھر نما ز جمعہ ادا کرنے کی اجازت نہیں دی گئی

 

سرینگر 23ستمبر (کے ایم ایس)
غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں انجمن اوقاف جامع مسجد سرینگر نے قابض انتظامیہ کی طرف سے انجمن کے سربراہ اور کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنما میر واعظ عمر فاروق کو تاریخی جامع مسجد سرینگر میں نماز جمعہ اداکرنے کی ایک بار پھر اجازت نہ دینے کی شدید مذمت کی ہے ۔
کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق انجمن اوقاف نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا کہ قابض انتظامیہ نے گزشتہ کئی ہفتوں کی طرح آج بھی میرواعظ عمرفاروق کو نماز جمعہ ادا کرنے کیلئے جامع مسجد جانے سے روکنے کیلئے انکی رہائش گاہ کے باہر بھارتی فورسز کے اضافی دستے تعینات کردیے۔میر واعظ عمر فاروق 5اگست 2019سے غیر قانونی طور پر گھر میں نظر بند ہیں، جب مودی کی فسطائی بھارتی حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو منسوخ کر کے پورے مقبوضہ علاقے کا محاصرہ کرلیاتھا۔بیان میں کہا گیا کہ وادی بھر سے مسلمانوں کی بڑی تعداد جامع مسجد سرینگر میں جمعہ کی نماز ادا کرنے اور میر واعظ کا خطبہ سننے کیلئے آتی ہے اورمیر واعظ کی مسلسل نظر بندی کی وجہ سے ان کے جذبات مجروح ہو رہے ہیں ۔ انجمن نے کہا کہ میر واعظ کی رہائی کے بارے میں مقبوضہ کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر کے بیان کے بعد امید تھی کہ انہیں رہا کر دیا جائے گالیکن ابھی تک ایسا نہیں ہواہے۔بیان میں امید ظاہر کی گئی ہے کہ ماہ ربیع الاول کی آمد اور ولادت باسعادت حضرت پیغمبر آخر الزماں محمد رسول اللہ ۖ کی مناسبت سے میرواعظ کی نظر بندی ختم کی جائیگی تاکہ میر واعظ حضرت محمد مصطفی ۖ کے عالمی انسانیت ،اخوت اور رواداری کے پیغام کو عام کرسکیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

%d bloggers like this: