پاکستان

 مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ عالمی قوانین کے منافی ہے، راجہ پرویز اشرف

raja parviaz Ashrafاسلام آباد:
قومی اسمبلی کے اسپیکر راجہ پرویز اشرف نے بھارتی حکومت کے 5اگست 2019کے مقبوضہ جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت منسوخ کر نے کے غیر قانونی اقدام کے خلاف اپیلوں پر بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ فیصلہ جانبدارانہ اور عالمی قوانین کے منافی ہے۔
کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق راجہ پرویز اشرف نے فیصلے پر اپنے رد عمل پر مبنی بیان میں کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہاکہ بھارتی سپریم کورٹ کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کو بھارت کا اٹوٹ انگ قرار دینا انتہائی افسوسناک ہے۔انہوں نے کہاکہ بھارت کشمیر سے متعلق سلامتی کونسل کی قراردادوں سے مسلسل بھاگ رہا ہے اور بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے سے کشمیر عوام کے جذبات بری طرح مجروح ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ کشمیری عوام کی امنگوں کے برعکس ہے، کشمیری عوام گزشتہ 7 دہائیوں سے زیادہ عرصے سے کشمیر کی آزادی کیلئے جدو جہد کر رہے ہیں۔انہوں نے واضح کیاکہ بھارت کی انتہا پسند حکومت کے اوچھے ہتھکنڈے کشمیری عوام کی حق خودارادیت کی جدو جہد کو دبا نہیں سکتے۔ راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ کشمیری عوام نے کشمیر کی آزادی کیلئے لازوال قربانیاں دی ہیں، بھارتی حکومت اور سپریم کورٹ کے متعصبانہ اور جانبدارانہ فیصلے کشمیری عوام کے حوصلے پست نہیں کر سکتے۔کشمیری عوام کی جدو جہد آزادی کشمیر میں آزادی کا سورج طلوع ہونے تک جاری رہے گی، پاکستان کشمیری عوام کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا۔ پاکستان کی پارلیمان تمام علاقائی اور عالمی فورم پر کشمیری عوام کی آواز کو اجاگر کرتی رہے گی، عالمی برادری سلامتی کونسل کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق کشمیر میں استصواب رائے کرانے کیلئے کردار ادا کرے۔

متعلقہ مواد

Leave a Reply

Back to top button
%d